Saanson Main Ho Raha Hai Tehleel

Saanson Main Ho Raha Hai Tehleel Tera Ishq

Nasha Hai Ye Aaisa Kay Jiska Khumaar Na Utray..!

سانسوں میں ہو رہا ہے تحلیل تیرا عشق

نشہ ہے یہ ایسا کہ جسکا خمار نہ اترے

Purani Hokar Aur Bhe Kharab Hoti

Purani Hokar Aur Bhe Kharab Hoti Ja Rahi Hai

Muhabbat Bay Sharam Bay Hisaab Hoti Ja Rahi Hai..!

پرانی ہوکر اور بھی خراب ہوتی جا رہی ہے

محبّت بے شرم بے حساب ہوتی جا رہی ہے

Agar Saara Jahan Mera Hota

Agar Saara Jahan Mera Hota

Phr Bhe Main Tera He Hota

اگر سارا جہاں میرا ہوتا

پھر بھی میں تیرا ہی ہوتا

Suno Pagli Main Tere Honton Ki

Suno Pagli

Main Tere Honton Ki Lipistic Zaror Kharab Karonga

Par Teri Aankhon Ka ” Kajal Kabhi Nahin..!

سنو پگلی

میں تیرے ہونٹوں کی لپسٹک ضرور خراب کرونگا

پر تیری آنکھوں کا ‘ کاجل کبھی نہیں

Tere Baad Kisi Ko Bhe Piyaar Se

Tere Baad Kisi Ko Bhe Piyaar Se Na Daikha Mainay

Mujhay Muhabbat Ka Shoq Tha Awargi Ka Nahin..!

تیرے بعد کسی کو بھی پیار سے نہ دیکھا میں نے

مجھے محبّت کا شوق تھا آوارگی کا نہیں